Beware of Mobile Cash Scams

Beware of Mobile Cash Scams

Due to lack of awareness about cybersecurity, incidents of money being withdrawn from people’s mobile cash accounts through fraud are increasing day by day. Innocent citizens are falling victim to these scams and losing their hard-earned money. Criminals send fake messages to users containing details of the amount and then call them to say that money has been mistakenly transferred to their account. They ask the users to help them and urge them to share the code that comes in the SMS. Often, users fall for their trap and share the code, which is then used to withdraw money from their accounts. These views were expressed by Muhammad Asad Ul Rehman, a cyber expert at Cyber Security of Pakistan, while explaining the modus operandi of criminals who withdraw money from people’s mobile cash accounts.

He said that criminals call users and impersonate a representative of Easypaisa or JazzCash, saying that their account has been blocked. They tell the users that if they want to reactivate their account, they should send the code that comes in the SMS.As soon as the users share the code, money is withdrawn from their accounts. He advised users that the company representative will never call them and ask for their details. Therefore, users should not share their personal information, passwords, or one-time passwords (OTPs) with anyone. He further explained the modus operandi of criminals by saying that they also withdraw money from users’ accounts by offering them the lure of winning a lucky draw in a prize scheme.

He said that users should be wary of such fraudulent phone calls and should not share their sensitive information with anyone in order to protect themselves. Instead, they should report such criminals to the relevant authorities so that legal action can be taken against them and further users can be protected from their fraud.
Beware of Mobile Cash Scams
سائبر سکیورٹی کے متعلق آگاہی نہ ہونے کی وجہ سے لوگوں کے موبائل کیش اکاؤنٹ سے فراڈ کے ذریعے پیسے نکالنے کی وارداتوں میں دن بدن اضافہ ہونے لگا ہے۔ جرائم پیشہ افراد کے جانسے میں آ کر معصوم شہری اپنی خون پسینے کی کمائی سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔جرائم پیشہ افراد صارفین کو جعلی میسج بھیجتے ہیں جس میں رقم کی تفصیلات درج ہوتی ہیں اور اس کے بعد صارفین کو کال کر کے کہتے ہیں کہ آپ کے اکاؤنٹ میں غلطی سے پیسے ٹرانسفر ہو گئے ہیں براہ مہربانی ہماری مدد کریں اورصارفین کو ایس ایم ایس میں آنے والا کوڈ بتانے کے لیے زور دیا جاتا ہے۔اکثر صارفین ان کے جانسے میں آ کر کوڈ بتا دیتے ہیں جس کو استعمال میں لاتے ہوئے ان کے اکاؤنٹ سے پیسے نکال لیے جاتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار سائبر سکیورٹی آف پاکستان کے سائبرایکسپرٹ محمداسدالرحمن نے لوگوں کے موبائل کیش اکاؤنٹ سے پیسے نکالنے والے جرائم پیشہ افراد کا طریقہ واردات بتاتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ جرائم پیشہ افراد صارفین کوکال کر کے خود کو ایزی پیسہ یا جاز کیش کمپنی کا نمائندہ ظاہر کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ آپ کا اکاؤنٹ بلاک کر دیا گیا ہے اگر آپ اپنا اکاؤنٹ دوبارہ ایکٹو کروانا چاہتے ہیں تو ایس ایم ایس میں آنے والا کوڈ سینڈ کریں تا کہ آپ کا اکاؤنٹ ایکٹو کر دیا جائے۔ صارفین جیسے ہی کوڈ شیئر کرتے ہیں ان کے اکاؤنٹ سے پیسے نکال لیے جاتے ہیں۔ انہوں نے صارفین کو تلقین کی کہ کمپنی کا نمائندہ کبھی بھی آپ کو کال کر کے تفصیلات نہیں پوچھے گا لہذا صارفین اپنی ذاتی معلومات، پاسورڈاور ون ٹائم پاسورڈ (او ٹی پی) کسی سے شیئر نہ کریں۔انہوں جرائم پیشہ افراد کا طریقہ واردات بتاتے ہوئے مزید کہا کہ انعامی سکیم کی قراعہ اندازی میں نام آ جانے کا لالچ دے کر بھی صارفین کی ذاتی معلومات،پاسورڈ اور او ٹی پی حاصل کر کے ان کے اکاؤنٹس سے پیسے نکال لیے جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ صارفین ایسے فراڈ فون کالز سے ہوشیار رہیں، اپنے آپ کو محفوظ رکھنے کے لیے اپنی حساس معلومات کسی سے شیئر نہ کریں بلکہ ایسے جرائم پیشہ افراد کی اطلاع متعلقہ اداروں کو کریں تا کہ ان کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لاتے ہوئے مزید صارفین کو ان جرائم پیشہ افراد کے فراڈ سے محفوظ کیا جا سکے۔

Beware of Mobile Cash Scams

Search