Cybersecurity Awareness to Teachers

Cybersecurity expert Muhammad Asad Ul Rehman warned of the increasing threats posed by cyber security issues, social media, data privacy, and third-party risks. He said that in the past, wars were fought with swords, then guns, and gradually tanks, atom bombs, and missiles took their place. Similarly, in the future, cyber warfare will replace all of these. Muhammad Asad Ul Rehman expressed these views while delivering an awareness lecture on cyber security to the staff of a local school.

According to the details, Cyber Security of Pakistan organized an awareness lecture on cyber security for the staff of a local school. In the lecture, Cyber Security of Pakistan cyber expert Muhammad Asad Ul Rehman gave a lecture on cyber security to school teachers from different branches and taught them how to secure their accounts practically along with awareness of cyber attacks.

On the occasion, the school director, Muhammad Iftikhar, said that teachers can play a better role in preventing cyber attacks by educating people about cyber security. Awareness lectures on cyber security should also be organized for teachers of other schools and colleges so that teachers themselves can be careful of cyber attacks and can also warn their students. He said that teachers will fully support Cyber Security of Pakistan to eradicate the growing menace of hacking so that by completing the mission of Cyber Security You Pakistan, more and more people can be made aware of cyber security and saved from hacking.

On the occasion, a large number of teachers, besides cyber scouts Shahroz Ashraf, Hamza Nadeem, Tayyab Bhatti, Nawal Mehdi, and Natasha Malik also participated.

وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ٹیکنالوجی کی ترقی سے سائبر سیکیورٹی مسائل، سوشل میڈیا، ڈیٹا پرائیویسی اور تھرڈ پارٹی جیسے خطرات تیزی سے ابھر کر سامنے آ رہے ہیں۔ایک وقت تھا کہ تلواروں کے ذریعے جنگیں ہوتی تھیں پھر اس کی جگہ بندوقوں نے لے لی اور رفتہ رفتہ بندوقوں کی جگہ ٹینکوں، ایٹم بم اور میزائل نے لے لی۔ اسی طرح آنے والے وقتوں میں ان سب کی بجائے سائبر وار ہوا کرے گی۔ان خیالات کا اظہار سائبر سکیورٹی ایکسپرٹ محمداسدالرحمن نے مقامی سکول کے سٹاف کو سائبر سکیورٹی کے متعلق آگاہی لیکچر دیتے ہوئے کیا۔ تفصیلات کے مطابق سائبر سکیورٹی آف پاکستان کی جانب سے مقامی سکول کے سٹاف کے لیے سائبر سکیورٹی سے آگاہی کے لیکچر کا انعقاد کیا گیا جس میں سائبر سکیورٹی آف پاکستا ن کے سائبر ایکسپرٹ محمد اسدالرحمن نے مختلف برانچز سے آئے ہوئے سکول کے اساتذہ کو سائبر سکیورٹی کے متعلق لیکچر دیااور انہیں سائبر حملوں سے آگاہی کے ساتھ ساتھ اپنے اکاؤنٹس کو سکیور کرنا عملی طور پر سکھایا۔اس موقع پر سکول کے ڈائریکٹر محمد افتخار نے کہا کے بڑھتے ہوئے سائبر حملوں کی روک تھام سائبر سکیورٹی سے متعلق لوگوں کاآگاہی دینے میں اساتذہ بہتر کردار ادا کر سکتے ہیں۔ دیگر سکول و کالجز کے اساتذہ کے لیے بھی سائبر سکیورٹی سے متعلق آگاہی لیکچر کا انعقاد کیا جانا چاہیے تا کہ اساتذہ خود بھی سائبر حملوں سے محتاط ہوں اور اپنے طلباء و طالبات کو بھی خبردار کر سکیں۔انہوں نے کہا کے ہیکنگ کے بڑھتے ہوئے ناسور کو ختم کرنے کے لیے اساتذہ سائبر سکیورٹی آف پاکستان کا بھر پور ساتھ دیں گے تا کہ سائبر سکیورٹی آپ پاکستان کے مشن کو تکمیل تک پہنچاتے ہوئے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو سائبر سکیورٹی کے متعلق آگاہ کر کے ان کو ہیکنگ سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر اساتذہ کی کثیر تعداد کے علاوہ سائبر سکاؤٹس شہروز اشرف، حمزہ ندیم، طیب بھٹی، نوال مہدی، نطاشہ ملک نے بھی شرکت کی۔

Search